22

اپیل منجانب فنکار برادری منسلک اسٹیج ڈرامہ پنجاب

وزیر اعظم پاکستان عمران خان صاحب،چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ صاحب، وزیر اعظم کے مشیر زلفی بخاری صاحب ،وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار صاحب ،سینئر صوبائی وزیر علیم خان صاحب، گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور صاحب ،وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان صاحب اور وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال صاحب ۔آپ معززین سے درخواست ہے کہ حکومت لاکھوں ،کروڑوں ،اربوں روپے بانٹنے کی باتیں میڈیا پر آکر پریس کانفرنسوں میں روزانہ کررہی ہے۔اور دعویٰ کئے جارہے ہیں کہ ڈیڑھ کروڑ لوگوں کو امداد مل گئی ۔لیکن حقیقت یہ ہے کہ پنجاب بھر کے اسٹیج ڈرامہ سے منسلک فنکاروں تک یہ امداد ابھی تک نہیں پہنچی۔یہ فنکار لاہور ،گوجرانوالا،فیصل آباد ،راولپنڈی ،گجرات،جڑانوالا،بھکر،عارف والا اوکاڑہ ،ساہی وال،ملتان سے تعلق رکھتے ہیں ۔

یہ ڈیلی ویجز فنکار ہوتے ہیں کام کریں گے تو ان کو معاوضہ ملے گا ۔یہ ڈیڑھ ماہ سے بے روزگار ہیں۔پچانوے فیصد فنکار کرایے کے گھروں میں رہتے ہیں ۔اب تک کسی فنکار کو راشن کا ایک بیگ وفاقی یا پنجاب حکومت کی طرف سے نہیں ملا ہے۔اور نہ ہی مالی امداد کی صورت ایک پائی بھی نہیں ملی آج پانچ رمضان ہوگئے ہیں ۔درخواست ہے خدارا دو اڑھائی ہزار فنکاروں کو انصاف پروگرام کے ذریعے ،آرٹس کونسلوں یا پنجاب حکومت کے ذریعے ان کو رمضان کا راشن دیا جائے ۔تھیٹر انڈسٹری سے منسلک فنکاروں نے ستر سالوں میں حکومت پاکستان کے خزانہ میں انٹرٹینمنٹ ٹیکس کی مد میں اربوں روپے جمع کروائے ہیں ۔ اس وقت لاک ڈاؤن اور کورونا وائرس کی وجہ سے برے حالات ہیں سارے فنکار سفید پوش ہیں ۔ہاتھ نہیں پھیلا سکتے ۔احتیاطی تدابیر کے تحت عید الفطر سے پنجاب بھر کے تھیٹروں کو کھولنے کی اجازت دی جائے ۔حکومت کے پاس اتنا پیسہ نہیں ہے کہ ان کو گھر بیٹھ کر کھلا سکے۔کم از کم یہ فنکار اپنے کام پر آجائیں اس سے حکومت کو ریونیو بھی ملنا شروع ہو جائے گا اور کے گھروں کے چولہے بھی دوبارہ جل جائیں گے ۔امید ہے میں نے جن معززین سے اپیل کی ہے وہ فنکاروں کی داد رسی ضرور کریں گے ۔

قیصر ثناء اللہ خان
چیئرمین ایکشن کمیٹی
اسٹیج ڈرامہ آرٹسٹ ویلفئر ایسوسی ایشن،
چیئرمین اور پروڈیوسر تماثیل تھیٹر لاہور

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں